نیوز اینکر نے خبرنامہ وقت پر سنانے کے لئے پولیس کی مدد طلب کرلی، لیکن ایسا کیوں کرنا پڑا؟ جانئے | Daily Qudrat - Latest Urdu News website
Can't connect right now! retry

نیوز اینکر نے خبرنامہ وقت پر سنانے کے لئے پولیس کی مدد طلب کرلی، لیکن ایسا کیوں کرنا پڑا؟ جانئے


لندن (قدرت روزنامہ)بی بی سی برطانیہ ہی کا نہیں بلکہ دنیا کا ایک مستند نشریاتی ادارہ ہے لیکن گزشتہ روز اسے آئی ٹی کی ایک خامی کے باعث ایسا کام کرنا پڑ گیا کہ لاکھوں لوگوں کی تنقید کا نشانہ بن گیا. میل آن لائن کے مطابق براڈکاسٹنگ ہاﺅس میں آئی ٹی سسٹم میں خرابی آ جانے کے باعث بی بی سی کی لائیو نشریات بند ہو گئیں اور وہ پہلے سے ریکارڈ کیے گئے بلیٹن چلانے پر مجبور ہو گیا اورشام 6بجے کے بلیٹن کے لیے نیوز کاسٹر زفیونا بروس اور مارک ایسٹن کو ہنگامی طور پر مِل بینک میں واقع بیک اپ سٹوڈیو پہنچنے کا حکم دیا لیکن ٹریفک جام کی وجہ سے وہ شدید مشکل سے دوچار ہو گئے.

ضرور پڑھیں: شادی کی تقریب میں صرف ایک ہزار روپے کیلئے سسرالیوں نے پاکستانی دولہے کے کپڑے پھاڑ دیے

رپورٹ کے مطابق ٹریفک کے باعث فیونا اور مارک نے اپنی گاڑیاں چھوڑ کر ٹیکسی پکڑی لیکن پھر بھی ٹریفک میں پھنس گئے. اس پر انہوں نے پولیس کو کال کر دی اور ٹیکسی سے نکل کر پولیس کی گاڑی میں سوار ہو گئے اور یوں وہ دونوں 6بجے کے بلیٹن سے چند لمحے قبل بیک اپ سٹوڈیو پہنچنے میں کامیاب ہو گئے.مارک ایسٹن نے اپنی اور فیونا بروس کی ایک تصویر اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر پوسٹ کی ہے جس میں وہ اس ٹیکسی میں بیٹھے ہوتے ہیں.

مارک نے تصویر کے ساتھ لکھا کہ ”فیونا بروس کے ساتھ ٹیکسی میں مِل بینک سٹوڈیو جاتے ہوئے. بی ایچ میں واقع سٹوڈیو میں خرابی آ گئی. ہولناک ٹریفک. آہ.“ جب بی بی سی نے خرابی کے باعث ریکارڈ شدہ بلیٹن چلایا تو ناظرین سکرین کے ایک کونے پر Recordedلکھا دیکھ کرتنقید کرنے لگے. سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر گیری ڈیرک نامی شخص نے لکھا کہ ”بی بی سی 24گھنٹے لائیو نیوز چینل ہے لیکن ریکارڈڈ بلیٹن دکھا رہا ہے. میں آج کے بعد سکائی نیوز دیکھا کروں گا.“پیٹر پیٹروف نامی صارف نے بی بی سی سے سوال کرتے ہوئے لکھا کہ ”آپ کی سکرین پر ریکارڈڈ لکھا کیوں آ رہا ہے. کیا اب بی بی سی 24آورلائیو نیوز چینل نہیں رہا.“

..

ضرور پڑھیں: نئی نویلی دلہن اور دفتر خارجہ کی اسسٹنٹ ڈائریکٹر اپنے شوہر سمیت جاں بحق ، انتہائی افسوسناک خبرآگئی

مزید خبریں :