آئی ایم ایف کے پاس کب جارہے ہیں،وزیرخزانہ اسد عمرنے اعلان کردیا - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

آئی ایم ایف کے پاس کب جارہے ہیں،وزیرخزانہ اسد عمرنے اعلان کردیا


اسلام آباد (قدرت روزنامہ)وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے آئی ایم ایف سے پیکج لینے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ جیسے ہی آئی ایم ایف سے معاملات طے پا جائیں گے ہم آئی ایم ایف سے معاہدہ طے کرلیں گے.تفصیلات کے مطابق پاکستان اور آئی ایم ایف کے مابین ہونے والے مذاکرات حالیہ عرصے میں ناکام ہو گئے تھے جس کی وجہ عالمی مالیاتی ادارے کی جانب سے کڑی شرائط کا عائد کیا جانا تھا.

عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) نے پاکستان کو بیل آوٹ پیکج دینے کے لیے سخت شرائط عائد کیں.آئی ایم ایف کی جانب سے کہا گیا کہ جنرل سیلز ٹیکس (جی ایس ٹی) کو 18 فیصد تک بڑھایا جائے.اگر جی ایس ٹی بڑھایا گیا تو اس سے عوام براہ راست متاثر ہوں گے اور مہنگائی کا شدید طوفان آئے گا. شرائط میں آئی ایم ایف کی جانب سے کہا گیا ہے کہ بجلی پر سبسڈی مرحلہ وار ختم کی جائے. آئی ایم ایف نے پاکستانی حکومت کے سامنے شرط رکھی ہے کہ ٹیکس چوروں کے خلاف کاروائی کی جائے .بجلئ کے معاملے میں ترسیلی نقصان ختم کیا جائے.آئی ایم ایف کی جانب سے کہا گیا کہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان ،نیپرا اور اوگرا کو خود مختار بنایا جائے.آئی ایم ایف کی جانب سے کہا گیا ہے کہ شرح سود 1.5 فیصد بڑھائی جائے.تاہم تازہ ترین خبر کے مطابق پاکستان نے آئی ایم ایف کی سخت ترین شرائط کو ماننے سے انکار کر دیا ہے جس کے بعد پاکستان اور آئی ایم ایف میں مذاکرات ناکام ہو چکے تھے. اس حوالے سے بات کرتے ہوئے اسپیشل سیکرٹری کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف سےاگلی ملاقات کا ہدف 15جنوری کورکھاہے.15جنوری کو ملاقات سے پہلےاپنا معاہدہ سامنے رکھیں گے.انہوں نے بتایا کہ کچھ معاملات حل طلب ہیں جبکہ آئی ایم ایف اورپاکستان میں رابطےجاری رکھنےپراتفاق ہواہے.اس حوالے سے تازہ ترین خبر یہ ہے کہ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف سے مسلسل رابطے میں ہیں جبکہ پیکج کے حوالے سے بات چیت کی جارہی ہے.انکا کہنا تھا کہ جیسے ہی آئی ایم ایف کے ساتھ اتفاق ہوتا ہے معاہدہ کر لیا جائے گا.انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کی معاشی حالت میں بہتری آرہی ہے اور پاکستان کے دیوالیہ ہونے کا کوئی امکان موجود نہیں ہے.

..

مزید خبریں :

Load More