کرائسٹ چرچ حملے میں شہید ہونے والے اریب کی رواں سال شادی کی تیاریاں کی جا رہیں تھیں - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

کرائسٹ چرچ حملے میں شہید ہونے والے اریب کی رواں سال شادی کی تیاریاں کی جا رہیں تھیں


کراچی (قدرت روزنامہ) کرائسٹ چرچ حملے میں شہید ہونے والے اریب کے کزن نے بتایا ہے کہ ابھی تک ہمیں یقین نہیں آرہا کہ اریب اب اس دنیا میں نہیں رہا. سید عبدالرحیم شاہ کے مطابق اریب شاہ کی ایک بہن بھی ہے جو اپنے والدین کے ساتھ ہی غم سے نڈھال ہے.

سید اریب شاہ شہید کے کزن کے مطابق ابھی چند دن پہلے ہی انکی اریب سے فون پر تفصیلی بات چیت ہوئی تھی، اریب نیوزی لینڈ میں خوش نہیں تھا کیونکہ وہاں سے پاکستان آنے میں 36گھنٹے لگ جاتے تھے، اریب نے بتایا تھا کہ اس نے اپنی کمپنی میں درخواست دی ہے کہ اسے کسی اور ملک بھیج دیا جائے جہاں سے وہ جلد پاکستان پہنچ سکا کرے لیکن زندگی نے اسے اتنی پہلت ہی نہیں دی اور وہ نیوزی لینڈ میں ہی دنیا چھوڑ گیا. اریب کے کزن نے بتایا کہ اریب سکول کے دنوں میں لاابالی قسم کا نوجوان تھا لیکن کالج میں جانے کے بعد وہ بہت مہنتی ہو گیا اور ہم سب سے آگے نکل گیا. اریب کے ایک اور کزن سید وصی شاہ نے بتایا کہ اریب شاہ بہت مخلص اور نرم دل کا مالک تھا اور وہ بہترین دوست، بیٹا اور بھائی تھا. انہوں نے مزید کہا کہ اب خاندان میں اریب کی شادی کے حوالے سے باتیں چل رہیں تھیں اور رواں سال 27سالہ اریب کی شادی ہو جانی تھی لیکن اب وہ ہم میں نہیں رہا. انہوں نے کہا وہ ابھی تک یقین نہیں کر پائے کہ اریب انہیں چھوڑ کر جا چکا ہے. اریب کا تعلق ایک کاروباری خاندان سے تھا اور وہ اپنے والدین کے اکلوتے بیٹے تھے جبکہ انکی ایک بہن ہے. اریب نے ابتدائی تعلیم کراچی سے حاصل کی اور پھر انہوں نے چارٹڈ اکاؤٹنٹ کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد تین سال پہلے نیوزی لینڈ کی کمپنی پرائس واٹر کوپر میں ملازمت اختیار کر لی. اریب کی کمپنی پرائس واٹر کوپر نیوزی لینڈ نے سید اریب شاہ کو زبردست خراجِ تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ’اریب پی ڈبلیو سی کے خاندان کا حصہ تھے اور ہم انکی مسکراہٹ، گرم جوشی، کام اور ساتھیوں کے لیے قربانی کا جذبہ کبھی نہیں بھول پائیں گے. ہماری دعائیں اریب کے خاندان اور مسلم کمیونٹی کے ساتھ ہیں اور غم کا اظہار لفظوں میں ممکن نہیں ہے.‘

..

مزید خبریں :

Load More